بلاول بھٹو 284

بلاول بھٹو کا عمران خان کو جلد ریٹائرمنٹ پر بھیجنے کا اعلان

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہم عمران خان جیسے سیاستدان کو ریٹائرمنٹ پر بھیجیں گے۔

ملیر میں حلقہ این اے 237 آمد پر بلاول بھٹو زرداری اور آصفہ بھٹو زرداری کا ریلی کی صورت میں جلسہ گاہ پہنچنے پر والہانہ استقبال کیا گیا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے کارکنوں سے خطاب کیا اور کہا کہ ہم اپنے حقوق چھیننا جانتے ہیں، جیالوں نے سلیکٹڈ اور کٹھ پتلی کا مقابلہ کیا اور ملیر میں اسے تاریخی شکست دی۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ ہم عمران خان جیسے سیاستدان کو ریٹائرمنٹ پر بھیج دیں گے، پی ٹی آئی چیئرمین بنی گالہ میں بیٹھ کر مزے کرے اور پاکستان کی سیاست چھوڑ دے۔

پی پی چیئرمین نے مزید کہا کہ پاکستان کے عوام کے خلاف ایک سیاسی دجال سازشیں کر رہا ہے، ہمیں اس کی باتوں میں نہیں آنا ہے، عمران خان ایک جھوٹا اور منافق آدمی ہے۔

چیئرمین پی پی کا کہنا تھا کہ آج بھی اس کی سیاست جھوٹ پر مبنی ہے، یہ منافق شخص سمجھتا ہے کہ لوگ اس کی نا اہلی کو بھول جائیں گے، لیکن ایسا نہیں ہو گا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ یہ پہلے بھی سلیکٹڈ تھا، اب ایک مرتبہ پھر کوشش کر رہا ہے کہ یہ سلیکٹڈ ہو جائے، یہ اب خود مان رہا ہے کہ اس کے ہاتھ میں اختیار نہیں تھا۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو نے کہا کہ اگر اس کے ہاتھ میں اختیار نہیں تھا تو آپ نے استعفیٰ کیوں نہیں دیا، کیوں ہم پر مسلط رہے، سلیکٹڈ کی نا لائقی اور نا اہلی کا نقصان پورے ملک کو ہوا، معیشت اور خارجہ پالیسی کو نقصان ہوا۔

پی پی چیئرمین کا کہنا تھا کہ تبدیلی کا نعرہ تبدیلی نہیں تباہی ہے، یہ سب کو چور چور کہتا ہے، یہ خود زکوٰۃ اور چندہ چور نکلا، ہم مل کر پورے پاکستان کے لوگوں کی خدمت کریں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے کارکنوں کو سرخ سلام پیش کرتا ہوں، تمام اتحادیوں کے شکر گزار ہیں جنہوں نے ہمارا ساتھ دیا اور ہم نے سلیکٹڈ کو شکست دی۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ عمران خان کی سیاست نفرت اور ملک توڑنے کی سیاست ہے جبکہ پی پی کی سیاست محبت اور ملک جوڑنے کی ہے۔

چیئرمین کا کہنا تھا کہ آنے والا وقت ثابت کرے گا پاکستان نوجوان قیادت کےلیے تیار ہے، ہم عمران خان جیسے سیاستدانوں کو ہمیشہ کےلیے ریٹائرمنٹ دے دیں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ عوام نے اب سلیکٹڈ کا بھی ڈٹ کا مقابلہ کیا، ہم جانتے ہیں جمہوری جدوجہد کیسے کی جاتی ہے، ملیر کو ایسے ہی میرے ساتھ کھڑے ہونا ہے، جیسے بی بی اور ذوالفقار بھٹو کے ساتھ کھڑے تھے۔

پی پی چیئرمین بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ سے امید کرتا ہوں وہ یہاں کے عوام کے سارے مطالبات پر 90 دن میں کام شروع کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں