عمران خان 204

عمران خان کا اعلیٰ عدلیہ سے اہم سوال

عمران خان چیئرمین پاکستان تحریکِ انصاف کا کہنا ہے کہ ملک میں عام عوام کے لیے شرفِ انسانی جیسے بنیادی حق کو بھی تحفظ حاصل نہیں۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پرعمران خان نے سینیٹر اعظم سواتی کی گرفتاری پر اپنے ردِ عمل کا اظہار کیا ہے۔

عمران خان نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ دستور کا آرٹیکل 14 ”شرفِ انسانی کو قابلِ حرمت“ قرار دیتا ہے؛ چنانچہ سپریم کورٹ کے معزز ججز سے میرا سوال ہے کہ آیا دستور کے اس آرٹیکل کا اطلاق محض ریاست کے طاقتور حکام تک ہی محدود ہے کیونکہ باقی سب کیلئے تو شرفِ انسانی جیسے بنیادی حق کو بھی تحفظ حاصل نہیں؟‘

عمران خان چیئرمین پاکستان تحریکِ انصاف نے لکھا کہ سینیٹر اعظم سواتی کو برہنہ کیا گیا، انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور ان کی اہلیہ کو ایک نازیبا (غیرقانونی) ویڈیو بھجوا کر ان کی تذلیل کی گئی ۔

عمران خان نے مزید لکھا کہ ہفتوں تک وہ سپریم کورٹ سےحصولِ انصاف کےمنتظر رہے مگر ان کی کوششیں بےسود ثابت ہوئیں، جب قابلِ فہم غصّے اور مایوسی کےعالم میں اُنہوں نے (ان زیادتیوں پر) ردِعمل کا اظہار کیا توجیل میں ڈال دیا گیا اور ملک بھر میں ان کیخلاف کم و بیش 15 پرچےکاٹ لیے گئے۔

عمران خان نے عدلیہ سے مخاطب ہوتے ہوئے لکھا کہ اپنےمعزز ججز سے میں پھر سے پوچھتا ہوں کہ اس ساری صورتحال میں انصاف کدھر ہے؟

چیئرمین پاکستان تحریکِ انصاف نے مزید لکھا کہ کیا دستور کا آرٹیکل 14 امتیازی طور پر محض اعلیٰ اور طاقتور ریاستی حکّام کے لیے ہی قابلِ اطلاق رہے گا؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں